Thursday, February 28, 2019

Cgiragh e Daulat Raushan Karne Ka Tariqa 🇮🇳 چراغ دولت روشن کرنے کا طریقہ



Cgiragh e Daulat Raushan Karne Ka Tariqa 🇮🇳 چراغ دولت روشن کرنے کا طریقہ



Naqsh "Kia Khayal Hai" Ka Falsafa 🇮🇳 نقش "کیا خیال ہے" کا فلسفہ

Naqsh "Kia Khayal Hai" Ka Falsafa 🇮🇳 نقش "کیا خیال ہے" کا فلسفہ


Thursday, February 21, 2019

Huroof e Muqat'at o Ism e Azam حروف مقطات و اسم اعظم (Complete Book)

جملہ حقوق بحق ناشرمحفوظ

ناشر ادارہ روحانی امداد کی اجازت کے بغیر اس کتاب کے کسی بھی صفحہ کا عکس لینا یا اس کی پی ڈی ایف پر اپنا لوگو ایڈیٹ کرنا قانونی و اخلاقی جرم ہے

نامِ کتاب : حروفِ مقطعات و اسم اعظم
تاریخی نام : مقطع اسمِ اعظم حق ۱۴۳۹ ھ
موءلف   : صوفی محمد عمران رضوی القادری
سن اشاعت: 2019 /١٤٤٠
صفحات  : ١١٦

ناشر
ادارہ روحانی امداد کلکتہ
مغربی بنگال ، الہند
Cell +91-9883021668/Tel+91 33 25587502









Wednesday, February 13, 2019

Murshid Wazife Ke Sath Ek Noor Bhi Deta Hai 🇮🇳 مرشد وظیفے کے ساتھ ایک نور بھی دیتا ہے

Murshid Wazife Ke Sath Ek Noor Bhi Deta Hai 🇮🇳 مرشد وظیفے کے ساتھ ایک نور بھی دیتا ہے

Friday, January 25, 2019

Naqsh Ya Taweez Ascending Order Me Bhara Jata Hai 🇮🇳 نقش یا تعویذ اسینڈینگ آرڈر میں بھرا جاتا ہے



احباب میں کسی نے سوال کیا ہے کہ کتابوں میں بعض ایسے بڑے نقش ہوتے ہیں  جس کے چال کا پتہ نہیں ہوتا تو وہ کس طرح بھرا جائےگا ، تو اس سلسلے میں عرض ہے کہ کوئی بھی نقش جو بھرا جاتا ہے وہ ascending order میں بھرا جاتا ہے یعنی نقش کے خانوں میں پر کئے گئے  اعداد میں جس خانے میں سب سے چھو ٹا عدد ہوتا ہے وہاں سے نقش کی رفتار شروع ہوتی ہے اور  وہ اس نقش کا پہلا خانہ ہوتا ہے چاہے وہ نقش مربع ہو یا مثلث یا مخمس یا مسدس یا مثمن وغیرہ وغیرہ ، ۹ خانے کا نقش ہو یا ۱۰۰ خانے کا اس کا پہلا خانہ وہی ہوگا جس میں سب سے کم عدد ہے ،اور یہ بتایا جا چکا ہے کہ کوئی بھی نقش جو بھرا جاتا ہے وہ ascending order میں ہی بھرا جاتا ہے لہذا آپ با آسانی بڑے سے بڑا نقش ascending order کو فالو کرتے ہوئے بھر سکتے ہیں ، ہاں بعض نقوش میں کسر ہوتا ہے تو اس کا بھی پتا آپ کو نقش بھرنے کے دوران ہو جائےگا مثلا آپ نقشِ مخمس پر کر رہیں ہیں اور یہ نقش تین کسر کے ساتھ پرکیا گیا ہے تو اس کے خانہ نمبر دس میں مثلا ۱۰۰۲ ہوگا تو اسکے بعد خانہ نمبر گیارہ میں ۱۰۰۳ کے بجائے ۱۰۰۴ ہوگا ، اور ایک مشورہ احباب کو یہ بھی دونگا کہ جب آپ کوئی بڑا نقش پہلی بار لکھنے کا ارادہ کریں تو مطلوبہ وقت سے پیشتر رفلی کئی مرتبہ اسے پراکٹس کر لیں تاکہ عین وقت پر الجھن و پریشانی کا سامنا نا ہو ، اور میں اپنے احباب کو مثلث و مربع  کی بڑی زکات کے علاوہ تمام تر نقوش کی معمولی زکات بھی دلواتا ہوں جس سے انہیں ان نقوش کے لکھنے کا نا صرف اتفاق ہوتا ہے بلکہ وقتِ ضرورت بلاجھجھک  مکمل اعتماد کے ساتھ بڑے سے بڑا نقش پر کر نے کا ان کے اندر ملکہ پیدا ہو جاتا ہے


دعاء گو
فقیر قادری گدائے چشتی
محمد عمران رضوی القادری
کلکتہ ۔الہند

Friday, January 11, 2019

Isteqrar e Hamal Ka Ba Karamat Naqsh استقرار حمل کا باکرامت نقش

استقرار حمل کا باکرامت نقش 
از ۔ صوفی محمد عمران رضوی القادری
ماخوذ از الاوفاق قسط اول


یہ نقش سرکار اعلیٰ حضرت عظیم البرکت عظیم المرتبت نور اللہ مر کامستخریہ نقش سرکار اعلیٰ حضرت عظیم البرکت عظیم المرتبت نور اللہ مرقدہ کا مستخرجہ ہے اس نقش سے بانچھ پن کا علاج کیا جاسکتا ہے اور ساتھ ہی او لا د نرینہ کیلئے بھی آز مودہ ثابت ہو اہے اگر کسی کو صرف لڑکیاں ہوتی ہوں تو یہ نقش بروز اتوار شمس اور پہلی ساعت میں لکھ کرحمل قائم ہونے کے بعد عورت کو بند ھوائے ان انشاء اللہ فر زندہ پیدا ہوگا اور اگر کوئی عورت بانجھ ہے تو اس کے علاج کیلئے اس نقش کو ۱۲۰ عدد مشتری کی ساعت میں زعفران و عنبر سے لکھ دے کہ روزانہ بلا ناغہ پانی میں گھول کر پی لیا کرے تو ان شا ء اللہ چارماہ کہ اندر اسے استقرار حمل ہوگا گو ہرمراد سے دامن بھر جائیگا ساتھ ہی ایک نقش گلے میں ڈالے اس کے ساتھ طبی علاج بھی جاری رکھےگلے میں ڈالنے کیلئے یہ نقش لکھے اور اس کے باوجود حضور مفتی اعظم و الانقش گذر اسے بھی شامل کرکے دے پینے کیلئے نقش اسطرح لکھ کردے ق ف م وو غیرہ حروف کے منھ کھلے ہوں 

Naqsh Shifa e Kul Amraaz e Zanana نقش شفائے کل امراضِ زنانہ

نقش شفائے کل امراضِ زنانہ
از ۔ صوفی محمد عمران رضوی القادری
ماخوذ از الاوفاق قسط اول
یہ نقش عورتوں بچیوں کے ہر قسم کے پوشیدہ امراض اور حفاظت حمل کیلئے حضور مفتی اعظم ہند نور اللہ مرقدہ کا خاص عطیہ ہے ہزاروں عاملین سینکڑوں پیران عظام اس نقش کو بکثرت لکھتے آئے ہیں احباب عاملین و روحانی ممبران کو معمول مطب بنالیں 
 بسم اللہ الرحمن الرحیم اعوذ بکلمات اللہ التامات من کل عین لامات شر شیطان و ھامات ومن کل اوجاع واسقام وامراض وان یکادا الدین کفر والیز لقو نک با بصار ہم لما سمعو ااذکر و یقولون انہ لمجنون و ما ھوالا ذکر للعلمین اھیا اشراھیا بحق کھیص و بحق حمعسق بسم اللہ الشافی بسم اللہ الکافی بسم اللہ الذی لا یضر مع اسمعہ شی فی لا رض ولافی السماء و ھو السمیع العلیم برحمتک یا ارحم لر حمین بسم اللہ الرحمن الرحیم قل اعوذ برب الناس ملک الناس الہ الناس من شر الو سو اس الخناس الذی یو سوس فی صدور الناس من الجنتہ و الناس و صلی اللہ تعالیٰ علی سید نا محمد والہ و صحبہ و باریک و سلم 

Tuesday, January 8, 2019

33 Ayaat سی و سہ آیات مسمیٰ بہ ۳۳ آیات


بِسۡمِ اللّٰہِ الرَّحۡمٰنِ الرَّحِیۡمِ
اَلۡحَمۡدُ لِلّٰہِ رَبِّ الۡعٰلَمِیۡنَ ۙ﴿۱﴾ الرَّحۡمٰنِ الرَّحِیۡمِ ۙ﴿۲﴾ مٰلِکِ یَوۡمِ الدِّیۡنِ ﴿۳﴾ اِیَّاکَ نَعۡبُدُ وَ اِیَّاکَ نَسۡتَعِیۡنُ ﴿۴﴾ اِہۡدِ نَا الصِّرَاطَ الۡمُسۡتَقِیۡمَ ۙ﴿۵﴾ صِرَاطَ الَّذِیۡنَ اَنۡعَمۡتَ عَلَیۡہِمۡ ۙ۬ غَیۡرِ الۡمَغۡضُوۡبِ عَلَیۡہِمۡ وَ لَا الضَّآلِّیۡنَ ﴿۷بِسۡمِ اللّٰہِ الرَّحۡمٰنِ الرَّحِیۡمِالٓـمّٓ ۚ﴿۱﴾ ذٰلِکَ الۡکِتٰبُ لَا رَیۡبَ ۚۖۛ فِیۡہِ ۚۛ ہُدًی لِّلۡمُتَّقِیۡنَ ۙ﴿۲﴾ الَّذِیۡنَ یُؤۡمِنُوۡنَ بِالۡغَیۡبِ وَ یُقِیۡمُوۡنَ الصَّلٰوۃَ وَ مِمَّا رَزَقۡنٰہُمۡ یُنۡفِقُوۡنَ ۙ﴿۳﴾ وَ الَّذِیۡنَ یُؤۡمِنُوۡنَ بِمَاۤ اُنۡزِلَ اِلَیۡکَ وَ مَاۤ اُنۡزِلَ مِنۡ قَبۡلِکَ ۚ وَ بِالۡاٰخِرَۃِ ہُمۡ یُوۡقِنُوۡنَ ﴿۴﴾ اُولٰٓئِکَ عَلٰی ہُدًی مِّنۡ رَّبِّہِمۡ ٭ وَ اُولٰٓئِکَ ہُمُ الۡمُفۡلِحُوۡنَ ﴿۵﴾ وَ اِلٰـہُکُمۡ اِلٰہٌ وَّاحِدٌ ۚ لَاۤ اِلٰہَ اِلَّا ہُوَ الرَّحۡمٰنُ الرَّحِیۡمُ ﴿۱۶۳﴾ اَللّٰہُ لَاۤ اِلٰہَ اِلَّا ہُوَۚ اَلۡحَیُّ الۡقَیُّوۡمُ ۬ۚ لَا تَاۡخُذُہٗ سِنَۃٌ وَّ لَا نَوۡمٌ لَہٗ مَا فِی السَّمٰوٰتِ وَ مَا فِی الۡاَرۡضِ مَنۡ ذَا الَّذِیۡ یَشۡفَعُ عِنۡدَہٗۤ اِلَّا بِاِذۡنِہٖ یَعۡلَمُ مَا بَیۡنَ اَیۡدِیۡہِمۡ وَ مَا خَلۡفَہُمۡ ۚ وَ لَا یُحِیۡطُوۡنَ بِشَیۡءٍ مِّنۡ عِلۡمِہٖۤ اِلَّا بِمَا شَآءَ ۚ وَسِعَ کُرۡسِیُّہُ السَّمٰوٰتِ وَ الۡاَرۡضَ ۚ وَ لَا یَـُٔوۡدُہٗ حِفۡظُہُمَا ۚ وَ ہُوَ الۡعَلِیُّ الۡعَظِیۡمُ ﴿۲۵۵﴾ لَاۤ اِکۡرَاہَ فِی الدِّیۡنِ ۟ۙ قَدۡ تَّبَیَّنَ الرُّشۡدُ مِنَ الۡغَیِّ ۚ فَمَنۡ یَّکۡفُرۡ بِالطَّاغُوۡتِ وَ یُؤۡمِنۡۢ بِاللّٰہِ فَقَدِ اسۡتَمۡسَکَ بِالۡعُرۡوَۃِ الۡوُثۡقٰی ٭ لَا انۡفِصَامَ لَہَا وَ اللّٰہُ سَمِیۡعٌ عَلِیۡمٌ ﴿۲۵۶﴾ اَللّٰہُ وَلِیُّ الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡا ۙ یُخۡرِجُہُمۡ مِّنَ الظُّلُمٰتِ اِلَی النُّوۡرِ۬ؕ وَ الَّذِیۡنَ کَفَرُوۡۤا اَوۡلِیٰٓـُٔہُمُ الطَّاغُوۡتُ ۙ یُخۡرِجُوۡنَہُمۡ مِّنَ النُّوۡرِ اِلَی الظُّلُمٰتِ اُولٰٓئِکَ اَصۡحٰبُ النَّارِ ۚ ہُمۡ فِیۡہَا خٰلِدُوۡنَ ﴿۲۵۷لِلّٰہِ مَا فِی السَّمٰوٰتِ وَ مَا فِی الۡاَرۡضِ وَ اِنۡ تُبۡدُوۡا مَا فِیۡۤ اَنۡفُسِکُمۡ اَوۡ تُخۡفُوۡہُ یُحَاسِبۡکُمۡ بِہِ اللّٰہُ فَیَغۡفِرُ لِمَنۡ یَّشَآءُ وَ یُعَذِّبُ مَنۡ یَّشَآءُ وَ اللّٰہُ عَلٰی کُلِّ شَیۡءٍ قَدِیۡرٌ ﴿۲۸۴﴾ اٰمَنَ الرَّسُوۡلُ بِمَاۤ اُنۡزِلَ اِلَیۡہِ مِنۡ رَّبِّہٖ وَ الۡمُؤۡمِنُوۡنَ کُلٌّ اٰمَنَ بِاللّٰہِ وَ مَلٰٓئِکَتِہٖ وَ کُتُبِہٖ وَ رُسُلِہٖ ۟ لَا نُفَرِّقُ بَیۡنَ اَحَدٍ مِّنۡ رُّسُلِہٖ ۟ وَ قَالُوۡا سَمِعۡنَا وَ اَطَعۡنَا ٭۫ غُفۡرَانَکَ رَبَّنَا وَ اِلَیۡکَ الۡمَصِیۡرُ ﴿۲۸۵﴾ لَا یُکَلِّفُ اللّٰہُ نَفۡسًا اِلَّا وُسۡعَہَا لَہَا مَا کَسَبَتۡ وَ عَلَیۡہَا مَا اکۡتَسَبَتۡ رَبَّنَا لَا تُؤَاخِذۡنَاۤ اِنۡ نَّسِیۡنَاۤ اَوۡ اَخۡطَاۡنَا ۚ رَبَّنَا وَ لَا تَحۡمِلۡ عَلَیۡنَاۤ اِصۡرًا کَمَا حَمَلۡتَہٗ عَلَی الَّذِیۡنَ مِنۡ قَبۡلِنَا ۚ رَبَّنَا وَ لَا تُحَمِّلۡنَا مَا لَا طَاقَۃَ لَنَا بِہٖ ۚ وَ اعۡفُ عَنَّا ٝ وَ اغۡفِرۡ لَنَا ٝ وَ ارۡحَمۡنَا ٝ اَنۡتَ مَوۡلٰىنَا فَانۡصُرۡنَا عَلَی الۡقَوۡمِ الۡکٰفِرِیۡنَ ﴿۲۸۶﴾ شَہِدَ اللّٰہُ اَنَّہٗ لَاۤ اِلٰہَ اِلَّا ہُوَ ۙ وَ الۡمَلٰٓئِکَۃُ وَ اُولُوا الۡعِلۡمِ قَآئِمًۢا بِالۡقِسۡطِ لَاۤ اِلٰہَ اِلَّا ہُوَ الۡعَزِیۡزُ الۡحَکِیۡمُ ﴿ؕ۱۸اِنَّ رَبَّکُمُ اللّٰہُ الَّذِیۡ خَلَقَ السَّمٰوٰتِ وَ الۡاَرۡضَ فِیۡ سِتَّۃِ اَیَّامٍ ثُمَّ اسۡتَوٰی عَلَی الۡعَرۡشِ ۟ یُغۡشِی الَّیۡلَ النَّہَارَ یَطۡلُبُہٗ حَثِیۡثًا ۙ وَّ الشَّمۡسَ وَ الۡقَمَرَ وَ النُّجُوۡمَ مُسَخَّرٰتٍۭ بِاَمۡرِہٖ اَلَا لَہُ الۡخَلۡقُ وَ الۡاَمۡرُ تَبٰرَکَ اللّٰہُ رَبُّ الۡعٰلَمِیۡنَ ﴿۵۴﴾ اُدۡعُوۡا رَبَّکُمۡ تَضَرُّعًا وَّ خُفۡیَۃً اِنَّہٗ لَا یُحِبُّ الۡمُعۡتَدِیۡنَ ﴿ۚ۵۵﴾ وَ لَا تُفۡسِدُوۡا فِی الۡاَرۡضِ بَعۡدَ اِصۡلَاحِہَا وَ ادۡعُوۡہُ خَوۡفًا وَّ طَمَعًا اِنَّ رَحۡمَتَ اللّٰہِ قَرِیۡبٌ مِّنَ الۡمُحۡسِنِیۡنَ ﴿۵۶قُلِ ادۡعُوا اللّٰہَ اَوِ ادۡعُوا الرَّحۡمٰنَ اَیًّامَّا تَدۡعُوۡا فَلَہُ الۡاَسۡمَآءُ الۡحُسۡنٰی ۚ وَ لَا تَجۡہَرۡ بِصَلَاتِکَ وَ لَا تُخَافِتۡ بِہَا وَ ابۡتَغِ بَیۡنَ ذٰلِکَ سَبِیۡلًا ﴿۱۱۰﴾ وَ قُلِ الۡحَمۡدُ لِلّٰہِ الَّذِیۡ لَمۡ یَتَّخِذۡ وَلَدًا وَّ لَمۡ یَکُنۡ لَّہٗ شَرِیۡکٌ فِی الۡمُلۡکِ وَ لَمۡ یَکُنۡ لَّہٗ وَلِیٌّ مِّنَ الذُّلِّ وَ کَبِّرۡہُ تَکۡبِیۡرًا ﴿۱۱۱
فَتَعٰلَی اللّٰہُ الۡمَلِکُ الۡحَقُّ ۚ لَاۤ اِلٰہَ اِلَّا ہُوَ ۚ رَبُّ الۡعَرۡشِ الۡکَرِیۡمِ ﴿۱۱۶﴾ وَ مَنۡ یَّدۡعُ مَعَ اللّٰہِ اِلٰـہًا اٰخَرَ ۙ لَا بُرۡہَانَ لَہٗ بِہٖ ۙ فَاِنَّمَا حِسَابُہٗ عِنۡدَ رَبِّہٖ اِنَّہٗ لَا یُفۡلِحُ الۡکٰفِرُوۡنَ ﴿۱۱۷﴾ وَ قُلۡ رَّبِّ اغۡفِرۡ وَ ارۡحَمۡ وَ اَنۡتَ خَیۡرُ الرّٰحِمِیۡنَ ﴿ ۱۱۸بِسۡمِ اللّٰہِ الرَّحۡمٰنِ الرَّحِیۡمِوَ الصّٰٓفّٰتِ صَفًّا ۙ﴿۱﴾ فَالزّٰجِرٰتِ زَجۡرًا ۙ﴿۲﴾ فَالتّٰلِیٰتِ ذِکۡرًا ۙ﴿۳﴾اِنَّ اِلٰـہَکُمۡ لَوَاحِدٌ ﴿ؕ۴﴾ رَبُّ السَّمٰوٰتِ وَ الۡاَرۡضِ وَ مَا بَیۡنَہُمَا وَ رَبُّ الۡمَشَارِقِ ﴿۵﴾ اِنَّا زَیَّنَّا السَّمَآءَ الدُّنۡیَا بِزِیۡنَۃِۣ الۡکَوَاکِبِ ۙ﴿۶﴾ وَ حِفۡظًا مِّنۡ کُلِّ شَیۡطٰنٍ مَّارِدٍ ۚ﴿۷﴾ لَا یَسَّمَّعُوۡنَ اِلَی الۡمَلَاِ الۡاَعۡلٰی وَ یُقۡذَفُوۡنَ مِنۡ کُلِّ جَانِبٍ ٭ۖ﴿۸﴾ دُحُوۡرًا وَّ لَہُمۡ عَذَابٌ وَّاصِبٌ ۙ﴿۹﴾ اِلَّا مَنۡ خَطِفَ الۡخَطۡفَۃَ فَاَتۡبَعَہٗ شِہَابٌ ثَاقِبٌ ﴿۱۰﴾ فَاسۡتَفۡتِہِمۡ اَہُمۡ اَشَدُّ خَلۡقًا اَمۡ مَّنۡ خَلَقۡنَا اِنَّا خَلَقۡنٰہُمۡ مِّنۡ طِیۡنٍ لَّازِبٍ ﴿۱۱یٰمَعۡشَرَ الۡجِنِّ وَ الۡاِنۡسِ اِنِ اسۡتَطَعۡتُمۡ اَنۡ تَنۡفُذُوۡا مِنۡ اَقۡطَارِ السَّمٰوٰتِ وَ الۡاَرۡضِ فَانۡفُذُوۡا لَا تَنۡفُذُوۡنَ اِلَّا بِسُلۡطٰنٍ ﴿ۚ۳۳﴾ فَبِاَیِّ اٰلَآءِ رَبِّکُمَا تُکَذِّبٰنِ ﴿۳۴﴾یُرۡسَلُ عَلَیۡکُمَا شُوَاظٌ مِّنۡ نَّارٍ ۬ۙ وَّ نُحَاسٌ فَلَا تَنۡتَصِرٰنِ ﴿ۚ۳۵لَوۡ اَنۡزَلۡنَا ہٰذَا الۡقُرۡاٰنَ عَلٰی جَبَلٍ لَّرَاَیۡتَہٗ خَاشِعًا مُّتَصَدِّعًا مِّنۡ خَشۡیَۃِ اللّٰہِ وَ تِلۡکَ الۡاَمۡثَالُ نَضۡرِبُہَا لِلنَّاسِ لَعَلَّہُمۡ یَتَفَکَّرُوۡنَ ﴿۲۱﴾ ہُوَ اللّٰہُ الَّذِیۡ لَاۤ اِلٰہَ اِلَّا ہُوَ ۚ عٰلِمُ الۡغَیۡبِ وَ الشَّہَادَۃِ ۚ ہُوَ الرَّحۡمٰنُ الرَّحِیۡمُ ﴿۲۲﴾ ہُوَ اللّٰہُ الَّذِیۡ لَاۤ اِلٰہَ اِلَّا ہُوَ ۚ اَلۡمَلِکُ الۡقُدُّوۡسُ السَّلٰمُ الۡمُؤۡمِنُ الۡمُہَیۡمِنُ الۡعَزِیۡزُ الۡجَبَّارُ الۡمُتَکَبِّرُ سُبۡحٰنَ اللّٰہِ عَمَّا یُشۡرِکُوۡنَ ﴿۲۳﴾ ہُوَ اللّٰہُ الۡخَالِقُ الۡبَارِئُ الۡمُصَوِّرُ لَہُ الۡاَسۡمَآءُ الۡحُسۡنٰی یُسَبِّحُ لَہٗ مَا فِی السَّمٰوٰتِ وَ الۡاَرۡضِ ۚ وَ ہُوَ الۡعَزِیۡزُ الۡحَکِیۡمُ ﴿ ۲۴
بِسۡمِ اللّٰہِ الرَّحۡمٰنِ الرَّحِیۡمِقُلۡ اُوۡحِیَ اِلَیَّ اَنَّہُ اسۡتَمَعَ نَفَرٌ مِّنَ الۡجِنِّ فَقَالُوۡۤا اِنَّا سَمِعۡنَا قُرۡاٰنًا عَجَبًا ۙ﴿۱﴾ یَّہۡدِیۡۤ اِلَی الرُّشۡدِ فَاٰمَنَّا بِہٖ وَ لَنۡ نُّشۡرِکَ بِرَبِّنَاۤ اَحَدًا ۙ﴿۲﴾ وَّ اَنَّہٗ تَعٰلٰی جَدُّ رَبِّنَا مَا اتَّخَذَ صَاحِبَۃً وَّ لَا وَلَدًا ۙ﴿۳﴾ وَّ اَنَّہٗ کَانَ یَقُوۡلُ سَفِیۡہُنَا عَلَی اللّٰہِ شَطَطًا ۙ﴿۴﴾چہار قل مع بسم اللہ


Monday, January 7, 2019

Naqsh Taskheer e Khalaiq Ki Zakat Ka Tariqa نقش تسخیرِ خلائق کی زکات کا طریقہ

نقش تسخیرِ خلائق کی زکات کا طریقہ
از ۔ صوفی محمد عمران رضوی القادری
ماخوذ از الاوفاق قسط اول
یہ نقش مشہور زمانہ ہے اور ہمارے مشائخ قادر یہ بر کاتیہ رضویہ کے نو ادارات میں سے ہے اکثر اکابر اس کے عامل ہر گذ رے ہیں اور ہزاروں بند گان خدا کو اس نقش کے ذریعہ فیض یاب کیا ہے یہ نقش تسخیر خلق میں برق رفتار ہے اورجب قمر نحوست سے بری ہو زعفران سے لکھے یا دھات پر کندہ کرے فقر قادری اس نقش کوشرف آفتاب میں بکثرت لکھتا ہے نقش یہ ہے 
وفق نمبر ۴ 


نقش کی ریاضت اور زکات کا طریقہ
  بلا زکات و ریاضت محض اجازت بھی کافی ہے مگر فقر قادری کے بتائے ہوئے طریقے سے احباب اس کی ریاضت بھی کرلیں تو نور علیٰ نور ہوجائے
بروز اتوار شروع کرے اور روزانہ
۲۲ نقوش چالیس دنوں تک لکھے اور لکھے ہوئے نقوش کو دریا میں ڈالے آٹے میں لپیٹنا ضروری نہیں اور اگر دریا پاس نہیں تو آٹے میں لپیٹ کر اسے تالاب یا حوض میں ڈالے جن میں مچھلیاں ہو انشا ء اللہ اس نقش کا عامل ہوگا ۔


Nad e Ali Shareef Ki Zakat Ka Tariqa ناد علی شریف کی زکات کا طریقہ

نادعلی شریف کی زکات
                       از ۔ صوفی محمد عمران رضوی القادری 

طریقہ زکات مشائخ قادریہ برکاتیہ رضویہ


احباب کی فرمائش پر ناد علی شریف کی زکات کا آسان طریقہ نقل کر تا ہوں اس طریقے سے زکات ادا کرنے پر عامل مستجاب الدعوات ہو گا اور ہر جائز مقصد کے لئے جب بھی پڑھے گا باب استجابت کو کھلا پائیگا ،ہر قسم کا جادوسحرسفلی و علوی کا علاج کر سکے گا ،کسی اڑی مشکل میں ورد کریگا تو مشکل خود مشکل میں پڑ جائیگی ،حاجتمندوں کو اس کا نقش جس مقصد کے لئے لکھ کر دے گا انہیں کامیابی ملے گی ،جسمانی امراض
والوں کو شفاء ملے گی درد مندوں کو دوا ملے گی،ناد علی شریف کا عامل اپنی قسمت پر ناز کرے گااسے کسی محاز
پر ناکامیوں کا منھ نہیں دیکھنا پڑے گا ،اس کے دشمن ذلیل و خوار ہونگے جادو ٹونے سحر سے حفاظت رہےگی ،ہر حاجت غیب سے پوری ہو جایا کرے گی ،ناد علی شریف کی زکات کا یہ طریقہ درمیانہ ہے لیکن مبتدی حضرات کے لئے عمدہ اور آسان یہ طریقہ ہمارے مشائخ قادریہ برکاتیہ رضویہ کے معمولات میں رہا اول اجازت کسی صاحب مجاز سے حاصل کرے پھر ترک جمالی کے ساتھ بد ھ یا جمعرات سے شروع کرے بعد نماز فجر کا وقت مناسب ہے چہار قل و آیۃ الکرسی پڑھ کر اپنا حصار کرے تین دن چار ہزار ۴۰۰۰ مرتبہ نصاب کی نیت سے پڑھیں یہ کل ۱۲۰۰۰ بارہ ہزار ہوئے اور اس کی نصاب ہمارے مشائخ نے اتنی ہی مقرر فرمائی، پھرزکات کی نیت سے چوتھے اور پانچویں دن ۳۰۰۰ تین ہزار مرتبہ پڑھیں یہ نصاف کا نصف ہوا اور اس کی ز کات اتنی ہی ٹھہری اب چھٹے اور آخری دن قفل کی نیت سے ۱۵۰۰ پندرہ سو مرتبہ پڑھ کر ختم کرے روزانہ ناد علی شریف سے قبل ۱۱۰ مرتبہ درود غوثیہ اور ۱۰ مرتبہ اعتصام پڑھ کر ناد علی شروع کرے تعداد مکمل ہونے پر ۱۰ مرتبہ اختتام اور ۱۱۰ مرتبہ درود غوثیہ پڑھنا ہے ،چھٹے دن حسب توفیق نیاز
مولائے کائنات حضرت علی شیر خدا کرم اللہ وجہہ الکریم کی دلاکر بچوں میں تقسیم کرے،اب آپ عامل ناد علی شریف کے ہو گئے اسے باقی رکھنے کے لئے بلکہ اس میں مزید ترقی کے لئے ۱۱۰ ایک سو دس مرتبہ مع اعتصام و اختتا روزانہ پڑھتے رہیں مداومت کے لئے اب ۳ مرتبہ درود غوثیہ اور ایک مرتبہ اعتصام ۱۱۰ مرتبہ ناد علی ایک مرتبہ اختتام اور ۳ مرتبہ درود غوثیہ پڑھا کرے،دوران زکات پرہیز جمالی لازمی ہے اوپرجو تعداد زکات کی مذکور ہوئی آسانی کے لئے اسے ترتیب وار لکھے دیتا ہوں
تعدادِ نصاب و زکات ناد علی شریف
پہلے دن۔۔۔۔۔۔ ۴۰۰۰ چار ہزار مرتبہ
دوسرے دن ۔۔۔۔۔۴۰۰۰ چار ہزار مرتبہ
تیسرے دن۔۔۔۔۔۴۰۰۰ چار ہزار مرتبہ
چوتھے دن ۔۔۔۔۔۔۳۰۰۰ تین ہزار مرتبہ
پانچویں دن ۔۔۔۔۔۳۰۰۰ تین ہزار مرتبہ
چھٹے دن ۔۔۔۔۔۔۔۱۵۰۰ پندرہ سو مرتبہ
احباب اس ز کات کی ادائیگی سے قبل اجازت ضرور حاصل کریں تاکہ آپ کی محنت رائیگاں نا جائے اور کسی قسم کاضرر نا پہنچے عامل بننے کے بعد آپ رد سحر و دفع آسیب کے لئے مریضوں کو نقش سیفی لکھ کر دے سکتے ہیں اس نقش کو مزید قوی الاثر بنانے کے لئے اس کی زکات بھی ادا کر لیں تو بہتر یہ نقش سینکڑوں مسائل میں تنہا کافی ہے فقیر نے اس سے بے شمار کام لئے اور احباب کو بھی اس سے کام لینے کے مختلف طریقے نقل
 کر وائے یہاں ناد علی شریف کا نقشِ مثلث اور مربع حاضر کرتا ہوں انہیں معمول بنایا جائے مثلث رد سحر وغیرہ میں جلانے کے لئے استعمال کرائیں بربادی دشمناں کے لئے قبر میں دفن کر وائےا ور دیگر مقاصد میں اپنے صوابدید پر لکھ کر دےاور مربع حفاظت از دشمناں و نظر بد کے لئے لکھ دے سحر زدہ کو پینے کےلئے دیاکرے  اس کے ساتھ منسب آیات کا بھی اضافہ کر سکتے ہیں



طریقہ زکات ناد علی دیگر
ناد علی شریف کی زکات کا ایک دوسرا طریقہ یہ ہے کہ اسے چایس دنوں میں سوا لاکھ مرتبہ پڑھ کر ختم کرے اس میں پرہیز جمالی کرےروزانہ ۳۱۲۵  تین ہزار ایک سوپچیس مرتبہ اسی سابقہ طریقے سے پڑھنا ہے
اس زکات کو ادا کرنے کے بعد اگر کبھی خدانخواستہ چند دنوں کے لئے مداومت ترک ہو جائے جب بھی عمل قائم رہتا ہے البتہ بلا وجہ اور شدید حرج کے مداومت ترک کرنا محرومی کا سبب بن سکتاہے
طریقہ زکات ناد علی شریف دیگر
یہ زکات سوا لاکھ والی زکات سے عمدہ اور میرا پسندیدہ زکات ہے اس زکات میں زیارت مولائے کائنات حضرت علی شیر خدا کرم اللہ وجہہ الکریم کی بطریق منام ہوجاتی ہے اس کا یہ معنی نا لیاجائے کہ پچھلی دو زکاتوں میں زیارت نہیں ہو سکتی ،دوران زکات عامل کو خواب میں بشارتیں ہوتی ہیں اور سچے خواب دکھتے ہیں میں سمجھتا ہوں اگر کس نے اس عمل کو پار لگا لیا تو اسے رد سحر وغیرہ کے لئے کسی دوسرے عمل کی ضرورت پیش نہیں آئیگی اور ساری ضرورتیں غیب سے پوری ہوتی رہیںگی اس زکات کے اصول وہی ہیںجو پہلے مزکور ہوئےیعنی پرہیز جمالی وغیرہ بس اس میں اتنا اضافہ ہے اگر ہو سکے تو کرے کہ دوران چلہ مکمل خاموشی اختیار کرے اور لکھ کر یا اشارے سے بات کرےاول تو بات کرنے کی نوبت ہی نہیں آئیگی کیوں کہ جو دل میں خواہش کریگا وہ چند لمحوں میں اپنے سامنے پائےگا یا اس چیز کے مہیّا ہونے میں اتنا ہی وقت لگے گا جتنا کہ درکار ہے ،اگر خاموش رہنا مشکل ہو تو کم از کم ضرورت کے مطابق بات کرے یعنی کچھ مانگنا ہو یا کسی کو بلانا ہو وغیرہ یہ زکات کبریت احمر ہےجس نے اسے پار لگا لیا وہ کامیاب و کامران ہوا روزانہ کی تعداد ۵۱۸۴ ہےچالیس دنوں میں عامل ہو جائےگااور یہ عمل تا عمر قائم رہےگا ان شاء اللہ
طریقہ زکات ناد علی شریف دیگر
اس زکات میں پرہیز کچھ نہیں اور یہ زکات شادی شدہ عاملین افراد کے لئے بہت عمدہ ہےکیوں شادی شدہ افراد کو ترک حیوانات بہت مشکل ہوتا ہے اس لئے اپنے احباب سے کہتا ہوں جوانی اور تجرد کے عالم میں جتنی ریاضت چاہو کرلو ورنہ بعد کو بہت مشکل ہوتا ہے ،یہ زکات    ۱۱۰ دنوں میں مکمل ہوتی ہے روزانہ ۱۱۰۰ گیارہ سو کی تعداد میں ناد علی شریف پڑھا جائےگا پڑھنے کا طریقہ وہی سابقہ ہے دوران زکات اگر سفر
در پیش ہو تو اس کا انتظام پہلے سے کرے شروع دن سے ہی ایک مصلیٰ اس عمل کے لئے خاص رکھے اور اسی پر روزانہ وظیفہ کرے جب سفر میں جانا ہو مصلیٰ ساتھ لے جائے،بعد ۱۱۰ دن کے عامل ہو جائینگے پھر جسے چاہے نقش لکھ کر دے پانی دم کرے تاثیر باذاللہ پائینگےعمل قائم رکھنے کے لئے ۱۱۰ مرتبہ روزانہ ورد میں رکھےمع اعتصام و اختتام و درود غوثیہ
ناد علی شریف بطور وظیفہ
ہر مقصد میں کایابی ،شفائے بیماراںچاہے کیسا مرض ہو،مغلوبی دشمناں،مقدمات میں کامیابی،سحر جادو سے حفاظت،امتحان میں کایابی الیکشن میں کامیابی،جاہ و حشمت کا حصول،دشمن کی زبان بندی نظر بد سے حفاطت،قید سے رہائی،دفع بلاء حصول علم لدنی غرضیکہ کسی بھی نیک مقصد و خواہش کے لئے بلا زکات بھی اس کا ورد کرنے والا نا مراد نہیں رہتا لہٰذاچاہئیے کہ کسی صاحب مجاز سے اجازت لیکر روزانہ ۱۱۰ مرتبہ بطور وظیفہ ناد علی شریف پڑھا کرے ان شاء اللہ مراد کو پہنچے گا

نقش مثمن حرفی ناد علی شریف

یہ نقش اوپر بیان ہوئے تمام تر مقاصد کے لئے جمعرا ت کے دن بساعت مشتری زعفران سے لکھیں یا دھات پر کندہ کرائیں اور اس کی دوسری جانب نقش سورہ اخلاص یا نقش سورہ نصر کا حرفی بنائیں تو یہ ایک کامل لوح جملہ مقاصد کے لئے تیار ہوگی روزی کا مسئلہ ہو ترقی کاروبار کا یا دشمنوں سے حفاظت کا جادو کی کاٹ کا یا دفع آسیب و شیاطین کا سب میں یکساں کارگر پائینگے اس نقش کو دکان و مکان میں آویزاں کرنا بھی خیر وبرکت لاتا ہے عامل اپنے فہم و فراست کو بروئےکار لاکر استعمال کرائے




اجازت نامہ ناد علی شریف
میں فقیر قادری گدائے چشتی محمد عمران رضوی القادری ناد علی شریف کی اجازت برائے ادائے زکات اور ورد بطور وظیفہ کی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ساکن۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔کودیتا ہوں اور رب قدیر کی با رگاہ میں دعاء گو ہوں کہ وہ آپ کو اس عظیم الشان وظیفے کے فیوض و برکات اور انوار و تجلیات سے مالامال فرمائے اور حقیقی معنوں میں آپ کو اس امانت کا اہل بنائے

Featured Post

Charagh Hisar o Radde Sehar چراغ حصار ہ رد سحر(The Lamp For Protection & Removing Black Magic)

Charagh Hisar o Radde Sehar Beaunihi Tala Yeh Chragh Mufeed Hai Radde Sehar Hama Aqsaam  wa Dafa Bandish wa Hisaar e Makaan Ke Liye is chira...